vosa.tv
Voice of South Asia!

نیویارک کی شہری حکومت گرمی سے ستائے شہریوں کو راحت فراہم کرنے کے لیے متحرک

0

نیویارک کے سرکاری اسکولوں میں44اضافی کولنگ سینٹر قائم،آؤٹ ڈور پولز بند کرنے کے وقت میں توسیع کردی گئی اب پولز رات8بجے بند ہوں گئے

نیویارک(ویب ڈیسک)نیویارک سمیت امریکا کی دیگر ریاستیوں میں پچھلا ہفتہ گرم  ترین گزرا ہے جبکہ ویک اینڈ چل  رہا تھا  اور نیویارک کے شہری گرمی سے بچنے کے لیے ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں۔نیویارک سٹی  حکام نے  بروقت اقدامات کرتے ہوئے سرکاری اسکولوں میں 44 اضافی کولنگ سینٹرز قائم کیے جو رواں ہفتے تک  چلتے رہیں گئے شامل کیے ہیں۔ جن میں ایک چائنا ٹاؤن میں بھی شامل ہے۔ حکام نے شدید گرمی کی وجہ سے شہر کے آؤٹ ڈور پولز کو بند کرنے کے ٹائم میں توسیع کردی ہے۔ اب پولز رات 8 بجے بند ہوں گئے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ گرمی کی شدت نے چھوٹے گھروں میں رہنے والے خاندانوں کی زندگی اجیرن کردی ہے اور یہ خاندان راحت کے لیے رہائش گاہوں سے باہر آرہے ہیں۔خاندان کولنگ سینٹرز یا پھر پولز کا رخ کررہے ہیں۔کیونکہ شدید گرمی سے ہونے والی زیادہ تر اموات ایئر کنڈیشن کے بغیر اپارٹمنٹس میں ہوتی ہیں۔طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ جو لوگ باہر کام کرتے ہیں انہیں ہیٹ اسٹروک کا سب سے زیادہ خطرہ ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ، انتہائی عمر کے افراد اور وہ لوگ جو بلڈ پریشر یا دیگر قلبی ادویات لے رہے ہیں سب سے زیادہ خطرے میں ہیں۔ڈاکٹر ایرک نے کہا کہ اگر لوگوں میں سر درد، ہلکے سر میں درد، چکر آنا، متلی کی علامات ہونے لگیں اور وہ خود کو اس ماحول سے باہر نہ نکالیں کیونکہ یہ ٹھیک علامت نہیں ہے  اور بدقسمتی سے ہر سال لوگ ہیٹ اسٹروک سے مرتے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.