vosa.tv
Voice of South Asia!

 ایران کی 6ارب ڈالر تک رسائی روکنے کی قرار داد امریکی ایوان نمائندگان میں منظور

0


امریکی ایوان نمائندگان نے ایک دو جماعتی بل کی منظوری دی ہے۔جس کے تحت ایران کی چھ ارب ڈالر تک رسائی مسدود ہو جائے گی جو امریکہ نے قیدیوں کے ایک تبادلے کے سلسلے میں منتقل کیے تھے۔یہ قدم ری پبلکنزنے گزشتہ ماہ اسرائیل پر حماس کے مہلک حملوں میں ایران کے مبینہ کردار کے ردعمل میں اٹھایا ہے۔ایرانی دہشت گردی کے لیے کوئی فنڈ نہیں،کے عنوان سے یہ بل 119 کے مقابلے میں 307 ووٹوں سے منظور ہوا جب کہ ری پبلکنز نے بائیڈن انتظامیہ کوبقول ان کے مشرق وسطیٰ میں ایرانی حمایت یافتہ دہشت گردی کے لیے مالی اعانت میں شامل ہونے کا مورد الزام ٹھہرانے کی کوشش کی۔بحث کے دوران،ایوان کی خارجہ امور کی کمیٹی کے ری پبلکن چیئرمین مائیکل میکال نے کہا،خطے میں اس عدم استحکام کی صورتحال میں ایران کی اسپانسر کی گئی مزید دہشت گردی کے لیے چھ ارب ڈالر تک رسائی ہماری آخری ترجیح ہونی چاہیے۔انتظامیہ کے عہدے داروں نے اس تنقید کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران کو کوئی بھی فنڈز فراہم نہیں کیے گئے ہیں اور انہوں نے زور دے کر کہا کہ اگر وہ دیے بھی گئے ہیں تو انہیں صرف انسانی ہمدردی کی بنیادی ضروریات کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ریپبلکنز کی حمایت یافتہ یہ قرار داد اب سینیٹ میں پیش ہو گی جہاں یہ امکان نہیں ہے کہ ڈیمو کریٹ اکثریت اس کی حمایت کرے گی،یا ایران کو مزید کسی رقم کی منتقلی روکنے کے لیے فنڈز پر نئی پابندیاں نافذ کرے گی۔اس بل کی مخالفت کرنے والےمتعدد ڈیموکریٹ ارکان نے بائیڈن انتظامیہ کی جانب سے امریکی یرغمالوں کی رہائی کے بدلے رقم کی منتقلی کے فیصلے کا دفاع کیا.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.